intro5.jpg

Shams-ul-Awliya Hadhrat Hafiz Shamsuddin Turk Pani-Pati Quddisa Sirrohu

His name is Shamsuddin and the titles are Shams-ul-Awliya and Mushkil-Kusha. Father’s name is Sayyed Ahmad and parental lineage goes through a few chains of line up to Hadhrat Muhammad Bin Maula Ali RadhiAllahu Ta’la Anhuma who is famous by Hadhrat Muhammad Bin Hanfiya. He born at Turkistan and became well qualified of knowledge of Hadith, Tafsir (commentary of the Holy Quran), Jurisprudence, Logic & Philosophy etc, at very young age. However, within a few days he cloyed with every worldly things and went on the search of perfect spiritual teacher and travelled numerous places and having met with different great sufi saints reached to Ajodhan in the court of Baba Sahib. Hadhrat Baba Sahib sent him in the court of Hadhrat Makhdoom Ali Ahmad Sabir Kaliyari to be allegiance on his blessed hands after making him spiritually strong in riyazah and mujahidah. When he arrived at Kaliyar, Makhdoom Sabir Pak blessed him with the allegiance & caliphate and said, “Shamsuddin! You are my child. I prayed to my lord the almighty Allah that may my silsila continued with you and remain till the day of resurrection”. Hadhrat Sabir Pak trained him spiritually and after giving blessings and tabrrukat of sufi saints, departure him for Pani-Pat where he engaged for his whole life in the optimization and guidance of the creatures of the Almighty Allah. His date of wisal is 10th Jamadiuththani, 715 AH, the sacred shrine is the source of divine blessings at Pani-Pat.

girl.jpg
3.jpg
p2.png

SABRI

LECTURE SERIES

JAMIA CHISHTIYA

IN THE LIGHT OF PAST AND PRESENT

CHISHTIYA

GIRLS INTER COLLEGE

چشتیہ گرلس انٹر کالج

عرس بزرگان دین

صابری لیکچر سیریز

فتاویٰ

گیلری

عطیہ

نصاب

رکنیت

نتیجہ

أعوذ بالله من الشيطان الرجيم

بسم الله الرحمن الرحيم
قال اللہ تعالیٰ فی القرآن الکریم
"وَ اَقِیۡمُوا الصَّلٰوۃَ وَ اٰتُوا الزَّکٰوۃَ وَ ارۡکَعُوۡا مَعَ الرّٰکِعِیۡنَ ﴿البقرہ ۴۳﴾
"

“اور نماز قائم رکھو اور زکوٰۃ دیا کرو اور رکوع کرنے والوں کے ساتھ (مل کر) رکوع کیا کرو۔”

خانقاہ حضرت شیخ العالم علیہ الرحمۃ کے زیر سایہ چلنے والے ادارہ جامعہ چشتیہ کا قیام سن 2000ء میں ہوا, جسمیں فی الوقت شعبہ حفظ، درس نظامیہ، پرائمری و ہائر سیکنڈر کے تقریباً 1500 طلبہ و طالبات زیور تعلیم سے آراستہ ہو رہے ہیں. جن میں شعبہ حفظ و درس نظامیہ کے 200 طلبہ کے قیام و طعام کا انتظام جامعہ خود کرتا ہے. علاوہ ازیں جامعہ کے تدریسی و غیر تدریسی 40 ملازمین اور جامعہ کے دیگر اخراجات بهی ادارہ کے ذمہ ہیں.

لہٰذا آپ مخیر حضرات سے گزارش ہے کہ فطرہ، زکوٰۃ و دیگر عطیات سے جامعہ چشتیہ کی زیادہ سے زیادہ امداد کر صواب دارین حاصل کریں کہ اللہ رب العزت کا فرمان عالیشان ہے کہ:
“جو لوگ ﷲ کی راہ میں اپنے مال خرچ کرتے ہیں ان کی مثال (اس) دانے کی سی ہے جس سے سات بالیاں اگیں (اور پھر) ہر بالی میں سو دانے ہوں (یعنی سات سو گنا اجر پاتے ہیں)، اور ﷲ جس کے
لئے چاہتا ہے (اس سے بھی) اضافہ فرما دیتا ہے، اور ﷲ بڑی وسعت والا خوب جاننے والا ہے۔” (البقرہ-261)

اللہ تعالیٰ سے دعا ہے کہ وہ ہم سب کو خدمت دین کی توفیق عطا فرمائے… آمین.

بجاہ سید المرسلین صلی اللہ تعالیٰ علیہ و آلہ و سلم.

Jamia Chishtiya

Chishtiya Girls Inter College

Urs of Sufi Saints

Sabri Lecture Series

Fatwa

Gallery

Donate Us

Syllabus

Membership

Results

Certificates

cer1icon.gif
cer2icon.gif